31

امریکی ڈالر کے مقابلے پاکستانی روپے کی قدر میں بہتری

انٹر بینک مارکیٹ میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں تیزی سے بحالی، بدھ کو پاکستانی روپیہ گرین بیک کے مقابلے میں 172.78 روپے تک پہنچ گیا۔

یہ پیش رفت سعودی عرب کے اعلان کے بعد سامنے آئی ہے کہ وہ اپنے غیر ملکی ذخائر کی مدد کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان (اسٹیٹ بینک) میں 3 ارب ڈالر جمع کر رہا ہے۔

مرکزی بینک کی طرف سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق، مقامی کرنسی انٹر بینک مارکیٹ میں تقریباً 1.44 فیصد (یا 2.49 روپے) بڑھ کر 172.78 روپے پر بند ہوئی۔ منگل کو گرین بیک کے مقابلے میں مقامی کرنسی 175.27 روپے کی اب تک کی کم ترین سطح پر بند ہوئی۔


منگل کے آخر میں، سعودی فنڈ برائے ترقی نے کہا تھا کہ وہ اپنے غیر ملکی ذخائر کی مدد کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان (اسٹیٹ بینک) میں 3 بلین ڈالر جمع کر رہا ہے۔

فنڈ نے مزید کہا کہ سال کے دوران پاکستان کی تیل کی مصنوعات کی تجارت کے لیے 1.2 بلین ڈالر کی فراہمی کے لیے ایک باضابطہ ہدایت جاری کی گئی تھی۔

اس خبر کو تمام مالیاتی منڈیوں نے تسلیم کیا کیونکہ اس نے زرمبادلہ کے ذخائر پر مثبت اثر ڈالا۔

مزید برآں، وفاقی وزیر برائے توانائی حماد اظہر نے تصدیق کی کہ سعودی فنڈ نے پاکستان کے لیے سالانہ 1.2 بلین ڈالر کی تیل کی موخر ادائیگی کی سہولت کا اعلان بھی کیا ہے۔


تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ اس سے توانائی کے بحران اور تیل کی مہنگی درآمدات کی وجہ سے پیدا ہونے والی غیر یقینی صورتحال میں کمی آئے گی جو کرنسی کی قدر میں کمی کی بڑی وجہ ہے۔

روپے نے پچھلے پانچ ماہ سے گراوٹ کا رجحان برقرار رکھا تھا۔ مئی میں ریکارڈ کی گئی 152.27 روپے کی 22 ماہ کی بلند ترین قیمت کے مقابلے اس نے آج تک 13.46 فیصد (یا 20.51 روپے) کی کمی کی ہے۔

مرکزی بینک کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق، 1 جولائی 2021 کو رواں مالی سال کے آغاز سے مقامی کرنسی کی قدر میں 9.67 فیصد (یا 15.24 روپے) کی کمی واقع ہوئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں