81

کشمیر الیکشن: پی ٹی آئی نے مزید تین مخصوص نشستیں جیتیں ، آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی میں 32 جیتے۔

پی ٹی آئی نے پیر کو آزاد جموں و کشمیر (اے جے کے) قانون ساز اسمبلی میں تین مزید مخصوص نشستیں حاصل کیں ، جس سے اس کی کل نشستیں 32 ہو گئیں۔

آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی 53 نشستوں پر مشتمل ہے اور قانون سازی کے لیے 27 ووٹ درکار ہیں اور اب پی ٹی آئی کو واضح اکثریت حاصل ہے۔

پیپلز پارٹی نے کل 12 نشستیں حاصل کیں ، مسلم لیگ (ن) نے سات ، اور جموں کشمیر پیپلز پارٹی اور آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس نے ایک ایک نشست حاصل کی۔

آج ، قانون ساز اسمبلی کے ہال میں تین نشستوں پر ٹیکنوکریٹس ، بیرون ملک مقیم کشمیریوں اور علماء مشائخ کے لیے پولنگ ہوئی۔ پی ٹی آئی نے تینوں نشستیں جیتیں ، ہر امیدوار کے لیے 27 ووٹ حاصل کیے۔

ٹیکنوکریٹ کی نشست پر پی ٹی آئی کے رفیق نیئر ، بیرون ملک مقیم کشمیریوں کے لیے مخصوص نشست پر محمد اقبال اور علماء مشائخ کی نشست پر مولانا مظہر سعید منتخب ہوئے۔

آزاد جموں و کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے قانون ساز اسمبلی کل (منگل) کو طلب کی ہے جس کے دوران نومنتخب ارکان حلف اٹھائیں گے۔

اس کے بعد اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کا انتخاب کیا جائے گا جبکہ قائد ایوان (وزیراعظم) کا انتخاب اگلے دن (4 اگست) ہوگا۔

حکومت کے قیام کے بعد ، وزیر اعظم عمران خان 5 اگست کو آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی سے خطاب کریں گے ، جس دن 2019 میں بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر دی۔

پی ٹی آئی نے خواتین کے لیے تین مخصوص نشستیں حاصل کیں۔
ایک دن پہلے ، پی ٹی آئی نے آزاد جموں وکشمیر اسمبلی میں اپنی خواتین کی مخصوص نشستیں جیتنے کے بعد اپنی برتری بڑھا دی تھی ، جبکہ پی پی پی اور مسلم لیگ (ن) ایک ایک جیتنے میں کامیاب ہوئیں۔

پانچوں امیدوار بلا مقابلہ جیت گئے۔

پی ٹی آئی سے امتیاز نسیم ، صبیحہ صدیق ، کوثر تقدیس گیلانی کامیاب ہوئے جبکہ پیپلز پارٹی سے نبیلہ ایوب اور مسلم لیگ (ن) سے نصران عباسی جیتنے والے امیدوار تھے۔

مخصوص نشستوں کے لیے کل 10 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے تاہم ان میں سے پانچ نے بعد میں اپنے نام واپس لے لیے۔

پی ٹی آئی ایل اے 16 میں غالب ہے۔
29 جولائی کو ، پی ٹی آئی نے اے جے کے ایل اے کی ایل اے 16 باغ 3 کی نشست جیت لی ، جس کے نتائج چار پولنگ اسٹیشنوں پر دوبارہ پولنگ کے لیے روک دیے گئے تھے ، 25 جولائی کو جھڑپوں کے بعد پولنگ رک گئی تھی۔

غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے امیدوار سردار میر اکبر نے 23،561 ووٹ حاصل کیے جبکہ پیپلز پارٹی کے سردار قمر زمان نے 23،267 ووٹ حاصل کیے جو کہ صرف 294 ووٹوں کا فرق ہے۔

سرکاری ملازمین کے ڈالے گئے کل 939 ووٹوں میں سے پی ٹی آئی کو 396 جبکہ پی پی پی کو 421 ووٹ ملے۔

25 جولائی کو ہونے والے انتخابات میں پی ٹی آئی 25 نشستوں کے ساتھ سب سے بڑی فاتح بن کر ابھری ، پیپلز پارٹی 11 کے ساتھ دوسرے نمبر پر آئی ، جبکہ مسلم لیگ (ن) نے چھ نشستوں پر کامیابی حاصل کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں