25

ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت پاکستان کی قومی سلامتی کے لیے خطرناک ہے: شہباز شریف

جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے ڈالر کی قیمتوں میں مسلسل اضافے کو قومی معیشت کے لیے تباہ کن اور قومی سلامتی کے لیے خطرناک قرار دیا۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر نے ایک سرکاری بیان میں کہا ہے کہ ڈالر کی قیمت اور افراط زر میں اضافہ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے ساتھ خفیہ معاہدے کا نتیجہ ہو سکتا ہے۔


انہوں نے کہا کہ ڈالر کی شرح میں اضافہ لوگوں کو غریب بنا رہا ہے لیکن حکومت کو ان کی حالت زار کی کوئی پرواہ نہیں ہے۔

شہباز نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ ڈالر کی قیمتوں میں کسی بھی اضافے نے ملک میں مہنگائی کو ہمیشہ بڑھایا ہے۔

انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ پارلیمنٹ کو آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات کے نتائج سے آگاہ کرے اگر اس کے ساتھ معاہدہ ختم نہیں ہوا ہے۔

شہباز نے کہا ، “پارلیمنٹ سے آئی ایم ایف کے ساتھ طے شدہ شرائط و ضوابط کو چھپانا اس میں کچھ مضحکہ خیز ہے۔”

انہوں نے کہا کہ عوام مہنگائی اور بے روزگاری کے حوالے سے آئی ایم ایف کی پیش کردہ شرائط پر راضی ہونے کی قیمت ادا کر رہے ہیں۔

پیر کو درآمدی ادائیگیوں کے بڑھتے ہوئے دباؤ کے ساتھ ساتھ آئی ایم ایف کے فیصلے کی تاخیر کے حوالے سے غیر یقینی صورتحال کے باعث پیر کو انٹر بینک مارکیٹ میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپیہ 174.43 روپے کی نئی تاریخی سطح پر پہنچ گیا۔ 6 بلین ڈالر کی توسیعی فنڈ سہولت (ای ایف ایف)

آج انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 0.43 روپے بڑھ گیا ہے جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں 1 روپے 20 پیسے کا اضافہ ہوا ہے۔

اس وقت اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 175.5 روپے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں