22

پنجاب حکومت کی نوکریاں: وزیراعلیٰ بزدار نے 100,000 آسامیاں بھرنے کی منظوری دے دی

پنجاب حکومت نے صوبے بھر کے مختلف محکموں میں 100,000 آسامیاں پر کرنے کی تجویز کی منظوری دے دی ہے۔

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے بھرتیوں کی منظوری دی اور ہدایت کی کہ تمام عمل میں میرٹ اور شفافیت کو قواعد و ضوابط کے مطابق یقینی بنایا جائے۔

دی نیوز کی رپورٹ کے مطابق وزیراعلیٰ نے ایڈہاک ڈاکٹروں کو تنخواہوں کی ادائیگی میں حائل رکاوٹیں دور کرنے کا بھی حکم دیا اور ہدایت کی کہ تنخواہوں کی ادائیگی میں کوئی تاخیر نہ کی جائے۔

میڈیا کے ساتھ خالی آسامیوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب کے معاون خصوصی حسن خاور نے کہا کہ پہلے مرحلے میں محکمہ تعلیم میں 33 ہزار خالی آسامیوں کو پر کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ محکمہ پرائمری ہیلتھ کیئر میں 1200، سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر میں 2900، ہائر ایجوکیشن کی 2600، سول ڈیفنس میں 1200 اور محکمہ جیل خانہ جات میں 4300 آسامیاں خالی ہیں جنہیں مرحلہ وار پر کیا جائے گا۔

بھرتی کے عمل کے دوران 3,500 کالج اساتذہ کے انٹرنز اور 4,800 پٹواریوں کی آسامیاں بھی پُر کی جائیں گی۔

خاور نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ پولیس اور بارڈر ملٹری پولیس میں 12000 سے زائد آسامیاں پُر کی جائیں گی۔

ایس اے سی ایم نے کہا کہ وزیراعلیٰ بزدار نے ڈاکٹروں کو درپیش مشکلات کا سخت نوٹس لیا ہے اور بغیر کسی رکاوٹ کے ان کی تنخواہیں ادا کرنے کے احکامات دیے ہیں۔

خاور نے کہا کہ ترقی کا سفر 100,000 ملازمتوں کے ساتھ شروع ہوا ہے اور وزیراعلیٰ نے ہاؤسنگ، پبلک ہیلتھ انجینئرنگ، لوکل گورنمنٹ اور دیگر مختلف محکموں میں آسامیاں بھرنے کے لیے ضروری کارروائی شروع کرنے کی ہدایت کی ہے۔

اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے ایس اے سی ایم نے کہا کہ انتظامی بنیادوں پر تبادلے اور تعیناتیاں صوبے کے چیف ایگزیکٹو کا استحقاق ہے اور کوئی بھی افسر جو کارکردگی نہیں دکھاتا اسے اپنی سیٹ پر رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں