11

این اے 133 ضمنی انتخاب: لاہور ہائیکورٹ نے پی ٹی آئی کے جمشید چیمہ اور اہلیہ کی درخواستیں مسترد کر دیں

حکمراں جماعت کو بڑا دھچکا، لاہور ہائی کورٹ نے منگل کے روز این اے 133 (لاہور) کے ضمنی انتخاب کے لیے پی ٹی آئی کے امیدوار جمشید چیمہ اور ان کی اہلیہ کی کورنگ امیدوار ہونے کے خلاف دائر درخواستیں خارج کر دیں۔ ان کے کاغذات نامزدگی مسترد

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس جواد حسن اور جسٹس مزمل اختر شبیر پر مشتمل دو رکنی بینچ نے پی ٹی آئی اور ن لیگ کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد درخواستیں خارج کر دیں۔

ریٹرننگ افسر (آر او) نے درخواست گزاروں کے کاغذات نامزدگی مسترد کر دیے تھے اور الیکشن ٹریبونل نے بھی آر او کے فیصلے کو برقرار رکھا تھا۔

مسلم لیگ (ن) کے ووٹرز نے پی ٹی آئی امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کو چیلنج کرتے ہوئے کہا تھا کہ تجویز کنندہ بلال حسین الیکشن ایکٹ 2017 کے تحت ان دونوں کے تجویز کنندہ بننے کے اہل نہیں تھے۔

اس سے قبل، ہائی کورٹ کے دو ڈویژن بنچوں نے ذاتی وجوہات کی بناء پر درخواست پر سماعت کرنے سے خود کو الگ کر لیا تھا۔

جب منگل کو لاہور ہائی کورٹ کے دو ججوں کے بنچ نے کیس کی سماعت کی، تو اس نے درخواست گزاروں کو یہ تاثر دینے کے خلاف خبردار کیا کہ عدالت کی طرف سے تاخیر ہوئی ہے۔

ڈان ڈاٹ کام کی رپورٹ کے مطابق سماعت کے دوران چیماس کے وکیل مبین الدین قاضی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ریٹرننگ افسر نے کاغذات نامزدگی اس بنیاد پر مسترد کیے کہ ان کا تجویز کنندہ حلقہ این اے 133 میں رجسٹرڈ ووٹر نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ تجویز کنندہ نے درخواست گزاروں کی امیدواری تجویز کرنے سے پہلے الیکشن کمیشن آف پاکستان سے ووٹر سرٹیفکیٹ حاصل کیا تھا۔

نشاندہی کی گئی کہ ووٹر سرٹیفکیٹ میں ووٹر کا حلقہ نہیں دکھایا گیا۔

درخواست گزاروں کو میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا کہ ان کا تجویز کنندہ حلقے کا رجسٹرڈ ووٹر نہیں ہے، انہوں نے دلائل دیتے ہوئے مزید کہا کہ درخواست گزاروں نے ای سی پی سے تجویز کنندہ کو تبدیل کرنے کی اجازت مانگی، لیکن ان کی درخواست خارج کر دی گئی۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ پی ٹی آئی امیدوار کے وکیل نے ای سی پی کو اس تضاد کا ذمہ دار ٹھہرایا کہ تجویز کنندہ ووٹر لسٹ میں نہیں تھا جبکہ اس کے خاندان کے تمام افراد این اے 133 میں ووٹر تھے۔

لاہور ہائیکورٹ نے دلائل سننے کے بعد درخواست خارج کر دی۔

حلقہ این اے 133 مسلم لیگ ن کے پرویز ملک کے انتقال کے بعد خالی ہوا تھا اور ای سی پی نے 5 دسمبر کو ضمنی انتخاب کا اعلان کیا تھا۔

پرویز ملک کی بیوہ شائستہ پرویز ملک اس نشست پر مسلم لیگ ن کی امیدوار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں