16

حکومت نئے سال کے موقع پر گیس کے نرخوں میں 400 فیصد اضافہ کرے گی، شہباز شریف کا انتباہ

مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے جمعرات کو خبردار کیا ہے کہ حکومت نئے سال کے موقع پر گیس کے نرخوں میں 400 فیصد اضافہ کرنے کے لیے پوری طرح تیار ہے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ صارفین کو جنوری 2020 سے اضافی 1000 روپے ادا کرنے ہوں گے کیونکہ حکومت نے عوام پر گیس بم گرانے کا منصوبہ بنایا ہے۔

پی ٹی آئی کی زیرقیادت حکومت کی نااہلی، مہنگائی اور کرپشن پر تنقید کرتے ہوئے شہباز نے کہا کہ گیس کے بعد ملک میں چینی کا بحران ایک بار پھر سر اٹھا رہا ہے۔ چینی کی قیمت کے حوالے سے بات کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں چینی 52 روپے فی کلو میں دستیاب تھی اور اب 130 سے ​​150 روپے فی کلو فروخت ہو رہی ہے۔

پیٹرولیم ڈیلرز کی ہڑتال کے دوران ملک بھر کے پیٹرول پمپس پر لگی لمبی قطاروں کا ذکر کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ لوگ لمبی قطاروں میں کھڑے ہو کر پرانے پاکستان اور نواز شریف کو یاد کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ مہنگائی، لمبی قطاریں، یو ٹرن اور جھوٹ نئے پاکستان کی پہچان بن چکے ہیں۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ موجودہ حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے غریب بھوک سے مر رہے ہیں۔

‘حکومت پوری قوم کو راشن کارڈ تک لے آئی ہے’
اس سے قبل 5 نومبر کو قیمتوں میں اضافے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے کہا تھا کہ جب سے موجودہ حکومت برسراقتدار آئی ہے، اس نے پوری قوم کو ’’راشن کارڈ‘‘ تک پہنچا دیا ہے۔

انہوں نے ٹویٹ کیا کہ عمران خان مہنگائی کا کلہاڑا عوام پر مارتے ہیں اور پھر سوچتے ہیں کہ ملک میں مہنگائی کیوں بڑھ رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ “پچھلے تین سالوں میں خوردنی تیل کی قیمتوں میں 130 فیصد سے زیادہ اضافہ ہوا ہے۔”

مسلم لیگ (ن) کے صدر نے کہا تھا کہ خوردنی تیل کی قیمت 160 روپے سے بڑھ کر 369 روپے تک جانا بلاجواز ہے، انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم کی جانب سے عوام کے لیے ریلیف پیکج کے اعلان کے بعد ’مہنگائی کا طوفان‘ آیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں