56

بلاول نے سندھ لوکل گورنمنٹ ترمیمی بل کا دفاع کر دیا، کہتے ہیں ناقدین کھا جائیں گے

پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پیر کو سندھ لوکل گورنمنٹ (ترمیمی) بل 2021 کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ قانون سازی پر تنقید کرنے والے کھا جائیں گے۔

سندھ لوکل گورنمنٹ ایکٹ گزشتہ ہفتے سندھ اسمبلی کے ایک ہنگامہ خیز اجلاس میں ترامیم کے ساتھ منظور کیا گیا تھا جس میں اپوزیشن کی جانب سے شدید احتجاج کیا گیا تھا۔

پی پی پی چیئرمین نے کراچی میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت نے جو قانون متعارف کرایا ہے وہ کسی اور صوبے میں موجود نہیں ہے، جیسا کہ انہوں نے تنقید کرنے والوں پر تنقید کی۔

انہوں نے کہا کہ پارٹی لاہور میں بھی ترقی کر رہی ہے، کراچی اور لاہور کے لوگوں نے پیپلز پارٹی سے امیدیں وابستہ کر رکھی ہیں۔

“کراچی والے سمجھتے ہیں کہ پیپلز پارٹی ان کے مسائل حل کر سکتی ہے،” انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تنقید کا حق ہر ایک کو ہے لیکن جھوٹ نہیں بولنا چاہیے۔

پی پی پی کے تحت ترقیاتی منصوبوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے، بلاول نے ذکر کیا کہ پارٹی 1970 سے عوام کو گھر الاٹ کر رہی ہے، جبکہ پی ٹی آئی نے “ابھی یہ اقدام شروع کیا ہے۔”

“پی پی پی واحد جماعت ہے جو شہریوں کے مسائل کو سمجھتی ہے،” چیئرمین نے فخر کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی نے بلدیاتی نمائندوں کو زیادہ اختیارات دیئے ہیں۔

آصف علی زرداری کے بطور صدر دور پر روشنی ڈالتے ہوئے بلاول نے کہا کہ تمام اختیارات انہوں نے پارلیمنٹ کو دیے۔

پی ٹی آئی پنجاب میں اپنی مرضی کا نظام لا رہی ہے۔ اسلام آباد میں مقامی حکومت کے نمائندے سے صحت اور تعلیم کے نظام کا کنٹرول چھین لیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نئے ایکٹ کے تحت پراپرٹی ٹیکس بھی بلدیاتی اداروں کو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگر بلدیاتی ادارے ٹیکس جمع کریں گے تو بجٹ میں کوئی مسئلہ نہیں ہوگا۔

بلاول نے مزید کہا: “اس کے علاوہ، پولیس، صحت اور تعلیم کے شعبے بلدیاتی نمائندوں کو جوابدہ ہوں گے۔

چیئرمین نے کہا کہ پی پی پی اپنا کھویا ہوا اعتماد دوبارہ حاصل کر رہی ہے کیونکہ ہم عوام کی خدمت پر یقین رکھتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں