58

خیبرپختونخوا میں کل بلدیاتی انتخابات کا انعقاد

جیو نیوز کے مطابق، چارسدہ، نوشہرہ، مردان اور پشاور سمیت خیبر پختونخوا کے 17 اضلاع میں کل (اتوار) کو بلدیاتی انتخابات ہونے والے ہیں۔

خیبر، مہمند ایجنسی، صوابی، کوہاٹ، کرک، ہنگو، بنوں، لکی مروت، ٹانک، ہری پور، بونیر، باجوڑ اور ڈی آئی خان کے اضلاع میں میئر کونسل اور چیئرمین تحصیل کونسل کے لیے بھی ووٹنگ ہو گی۔ ویلج کونسل اور نیبر ہڈ کونسل کے چیئرمین اور ممبران بھی منتخب کیے جائیں گے۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کے مطابق 19 دسمبر کو ہونے والے انتخابات کے لیے کل 9 ہزار 223 پولنگ اسٹیشنز اور 28 ہزار 892 پولنگ بوتھ بنائے گئے ہیں۔

پشاور میں 860 پولنگ اسٹیشنز کو حساس، 165 کو انتہائی حساس اور 224 کو نارمل قرار دیا گیا ہے۔

17 اضلاع میں کل 12.66 ملین رجسٹرڈ ووٹرز ہیں، جن میں 7. 015 ملین مرد ووٹرز اور 5.653 ملین خواتین ووٹرز ہیں۔

ای سی پی کے مطابق پہلے مرحلے میں مختلف کیٹیگریز کے لیے 37,752 امیدوار حصہ لے رہے ہیں۔

ان میں سے 689 امیدوار سٹی اور تحصیل کونسل کے اہم عہدوں کے لیے جبکہ 19,282 امیدوار گاؤں اور محلہ کونسلوں میں ناظم/جنرل کونسلر کے عہدوں کے لیے انتخاب لڑ رہے ہیں۔

مزید برآں، خواتین کی کونسلر کی نشستوں کے لیے 3,870 امیدوار، کسان کونسلر کی نشستوں کے لیے 7,513، یوتھ کونسلر کی نشستوں کے لیے 6,081، کسانوں اور مزدوروں کی نشستوں کے لیے 7,428، اور اقلیتی کونسل کی رکن کی نشستوں کے لیے 282 امیدوار میدان میں ہیں۔

پشاور سٹی کونسل کی میئر شپ کے لیے کل 17 امیدوار میدان میں ہیں۔

ان میں پی ٹی آئی کے محمد رضوان خان، پی پی پی کے ارباب زرق خان، اے این پی کے شیر رحمان، جماعت اسلامی کے بحر اللہ اور جے یو آئی (ف) کے زبیر علی شامل ہیں۔

بیلٹ پیپرز پر پارٹی کے نام اور نشانات لکھے جائیں گے اور ہر ووٹر کو چھ مختلف رنگوں کے بیلٹ پیپر دیے جائیں گے۔ ای سی پی نے کہا کہ ویلج، نیبر ہڈ کونسل کی جنرل نشست کے لیے گرے رنگ کا بیلٹ پیپر ہوگا۔

نشستوں کے لیے بیلٹ پیپرز کے رنگ اس طرح نامزد کیے گئے ہیں:

میئر اور چیئرمین تحصیل کونسل کی نشست وائٹ
گاؤں کی جنرل سیٹ، نیبر ہڈ کونسل – گرے
خواتین کی نشست – گلابی
نوجوان امیدوار کی نشست – پیلا
بیلٹ پیپرز پیلے ہوں گے۔
کسان کی نشست – سبز
اقلیتی نشست – براؤن

تمام سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کے لیے انتخابی مہم آخرکار اختتام پذیر ہو گئی، ہر سٹی کونسل، تحصیل، گاؤں، اور محلہ کونسل میں روزانہ ریلیاں اور کارنر میٹنگز ہو رہی ہیں۔

مختلف اضلاع سے روزانہ متعدد شکایات موصول ہوتی ہیں جن میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا الزام لگایا جاتا ہے۔

ای سی پی کے پی کے دفتر میں ایک خصوصی شکایت سیل قائم کر دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں