55

کراچی کے کچھ علاقوں میں ہلکی سے موسلادھار بارش ہوئی

جمعرات کی سہ پہر شہر کے مختلف علاقوں میں درمیانی اور موسلا دھار بارش شروع ہوئی، جیسا کہ محکمہ موسمیات نے پہلے دن کی پیش گوئی کی تھی۔

جن علاقوں میں بارش ہوئی ان میں نارتھ کراچی، نیو کراچی، ناگن چورنگی، مسلم ٹاؤن، بفرزون، نارتھ ناظم آباد، ناظم آباد، صدر اور آئی آئی چندریگر روڈ شامل ہیں۔

پاکستان کے محکمہ موسمیات (پی ایم ڈی) نے بھی آج رات (جمعرات) کراچی میں گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارش کی پیش گوئی کی ہے۔

بارش کے موجودہ اسپیل کے بعد درجہ حرارت میں مزید کمی متوقع ہے۔

کراچی میں موسم سرما کی بارش کا دوسرا سلسلہ منگل کو شروع ہوا جب شہر کے کچھ حصوں میں ہلکی سے درمیانی بارش ہوئی جس سے موسم سرد ہوگیا۔

محکمہ موسمیات کی جانب سے جاری کردہ تازہ ترین موسمی اپ ڈیٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران پارہ 15 ڈگری سینٹی گریڈ تک گر گیا اور فضا میں نمی کی سطح 85 فیصد رہی۔ اس دوران شمال مشرقی ہوائیں 11 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلیں۔

چیف میٹرولوجیکل آفیسر سردار سرفراز نے بدھ کو میگا سٹی میں جمعرات کی رات تیز بارش کی پیش گوئی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بارش پیدا کرنے والا موجودہ نظام جمعہ کی صبح تک سندھ سے نکلنے کا امکان ہے اور شمالی پہاڑی علاقوں میں برف باری کا سبب بن سکتا ہے۔

بلوچستان میں بارشوں کا نظام مزید شدید ہو جائے گا۔
مزید برآں، پی ایم ڈی کے مطابق، بارش پیدا کرنے والا موجودہ نظام آج بلوچستان میں مزید شدید ہو جائے گا اور بعد میں ملک کے پہاڑی علاقوں میں پھیل جائے گا۔

سبی، مستونگ، بولان، قلات، خضدار، لسبیلہ، نصیر آباد اور کوہلو کے برساتی نالوں اور نہروں میں متوقع سسٹم کی وجہ سے ہونے والی شدید بارشوں کے نتیجے میں طغیانی کا خطرہ ہے۔

پی ایم ڈی کے مطابق کوئٹہ، پشین، زیارت، قلعہ عبداللہ، ہرنائی اور چمن میں شدید برفباری کا امکان ہے۔ اس سے ان علاقوں میں رابطہ سڑکیں بند ہو سکتی ہیں، اس لیے محکمہ موسمیات نے سیاحوں کو محتاط رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

گوادر، چمن، اورماڑہ، پسنی اور کیچ سمیت بلوچستان کے مختلف علاقوں میں بدھ تک مسلسل موسلادھار بارش نے تباہی مچا دی۔

اس سے قبل چیف میٹرولوجیکل آفیسر نے کہا تھا کہ 17 یا 18 جنوری کو مغربی سسٹم ملک میں داخل ہونے کا امکان ہے جس سے بلوچستان متاثر ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں