53

سیاحوں کے مری جانے پر پابندی میں توسیع

بدھ کو جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق، مری کی مقامی انتظامیہ نے سیاحوں کے مری میں داخلے پر پابندی میں 17 جنوری تک توسیع کر دی ہے۔

ذرائع کے مطابق پہاڑی اسٹیشن کے کئی دور دراز علاقوں میں بجلی ابھی تک بند ہے اور شہر میں گزشتہ ہفتے تاریخ کے بدترین برفانی طوفان کے بعد مواصلاتی نیٹ ورک بدستور منقطع ہے۔

حکومت نے مری کے مرکزی راستوں سے برف ہٹا دی ہے، برف میں پھنسی گاڑیوں کو ان کے مالکان تک پہنچانے کا عمل جلد شروع کر دیا جائے گا۔

گزشتہ ہفتے مری میں شدید برفانی طوفان سے 20 سے زائد افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

‘لوگ اپنی گاڑیاں سڑکوں پر چھوڑ گئے’

قبل ازیں وزیراعظم کے معاون برائے سیاسی رابطے شہباز گل نے کہا کہ انہوں نے صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے مقامی انتظامیہ کے ساتھ مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ جب شدید برفباری شروع ہوئی تو بہت سے لوگوں نے اپنی کاریں سڑکوں پر چھوڑ کر ہوٹلوں میں پناہ لی۔

گل نے کہا کہ ان کاروں کی وجہ سے ٹریفک کی روانی میں خلل پڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ “انتظامیہ متحرک ہے اور اس بات کو یقینی بنانے کی پوری کوشش کر رہی ہے کہ تمام سڑکیں ٹریفک کے لیے صاف ہوں۔”

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں