45

پی ٹی اے نے عوام کو خبردار کیا ہے کہ وہ اسٹار لنک کو ایڈوانس رقم ادا کرنے سے گریز کریں

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نے بدھ کے روز کہا کہ سیٹلائٹ براڈ بینڈ فراہم کرنے والی کمپنی سٹار لنک نے پاکستان میں انٹرنیٹ خدمات چلانے اور فراہم کرنے کے لیے اتھارٹی سے نہ تو کوئی درخواست دی ہے اور نہ ہی کوئی لائسنس حاصل کیا ہے۔

اس سلسلے میں جاری کردہ ایک بیان کے مطابق، پی ٹی اے نے اپنے مفاد میں عام لوگوں کو مشورہ دیا کہ وہ سٹار لنک یا اس سے منسلک کسی بھی ویب سائٹ پر دیے جانے والے کسی بھی پری بکنگ آرڈر میں ملوث ہونے سے گریز کریں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ “ہدایات ان رپورٹس کے تناظر میں سامنے آئی ہیں کہ سٹار لنک، اپنی ویب سائٹ کے ذریعے، مطلوبہ صارفین سے کہہ رہا ہے کہ وہ سامان/خدمات کے لیے پری آرڈر کے طور پر $99 (قابل واپسی) کی رقم ادا کریں۔”

پی ٹی اے نے مزید کہا کہ پی ٹی اے نے پہلے ہی سٹار لنک کے ساتھ یہ معاملہ اٹھایا ہے کہ وہ مطلوبہ صارفین سے پری آرڈر بکنگ فوری طور پر روکے کیونکہ کمپنی کو پاکستان میں انٹرنیٹ سروسز کی فراہمی کے لیے کوئی لائسنس نہیں دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں