59

کے پی ایل جی کے دوسرے مرحلے کے انتخابات 27 مارچ کو ہوں گے: ای سی پی

دی نیوز نے رپورٹ کیا، الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے جمعرات کو اعلان کیا کہ خیبر پختونخواہ (KP) کے 17 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کا دوسرا مرحلہ 27 مارچ کو ہوگا۔

اعلان کردہ شیڈول کے مطابق ریٹرننگ افسران 4 فروری کو کاغذات نامزدگی طلب کرنے کے لیے پبلک نوٹس جاری کریں گے جس کے بعد 7 سے 11 فروری تک کاغذات نامزدگی جمع کرائے جائیں گے۔ نامزد امیدواروں کی فہرست اگلے روز جاری کی جائے گی۔

ریٹرننگ افسران تین دن یعنی 14 سے 16 فروری تک کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کریں گے جبکہ کاغذات نامزدگی کی منظوری یا مسترد ہونے کے خلاف اپیلیں 17 سے 19 فروری تک دائر کی جائیں گی۔

مزید پڑھیں: مریم نواز کی وزیراعظم عمران خان کو گھر جانے کی درخواست

اپیلٹ ٹربیونل کی طرف سے اپیلوں پر فیصلہ کرنے کی آخری تاریخ 22 فروری ہے، جب کہ وہ اتوار کو چھوڑ کر 17 فروری سے اپنا کام شروع کر سکتے ہیں۔

امیدواروں کی نظرثانی شدہ فہرست 23 فروری کو شائع کی جائے گی جب کہ امیدواروں کی دستبرداری اور نظرثانی شدہ فہرست کی اشاعت کی آخری تاریخ 25 فروری مقرر کی گئی ہے۔

اس کے بعد مقابلہ کرنے والے امیدواروں کو انتخابی نشانات الاٹ کیے جائیں گے اور ان کی حتمی فہرست کی اشاعت 28 فروری کو کی جائے گی۔

دوسرے مرحلے کے دوران ایبٹ آباد، مانسہرہ، بٹگرام، تورغر، کوہستان اپر اور کوہستان لوئر، کولائی پالاس کوہستان، سوات، مالاکنڈ، شانگلہ، لوئر دیر، چترال لوئر اور چترال اپر، کرم، اورکزئی، شمالی میں بلدیاتی انتخابات ہوں گے۔ وزیرستان اور جنوبی وزیرستان۔

مزید پڑھیں: کسی کو احساس نہیں کہ کے پی کے ایل جی انتخابات ایک جدید، ترقی یافتہ نظام کی شروعات ہیں، وزیراعظم عمران خان کا افسوس

گزشتہ ماہ ہونے والے بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے کے دوران پی ٹی آئی کو بڑا دھچکا لگا تھا کیونکہ مولانا فضل الرحمان کی جے یو آئی کے امیدواروں نے پشاور، کوہاٹ اور بنوں میں تین بڑے میئرز کے انتخابات میں کامیابی حاصل کی تھی جب کہ مردان میں اے این پی میئر کی نشست جیتنے میں کامیاب رہی تھی۔ .

دھچکے کے بعد وزیر اعلی کے پی محمود خان نے وزیر اعظم عمران خان کو ایک رپورٹ پیش کی جس میں شکست کی وجوہات کے طور پر “روایتی سیاست اور موروثی مسائل” کا ذکر کیا گیا۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ پی ٹی آئی کی ناکامی کی وجہ پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم بھی تھی۔

وزیر اعظم نے اسلام آباد میں وزیر اعلیٰ سے ملاقات کے دوران کہا کہ مستقبل میں جانبداری اور رشوت کی بنیاد پر ٹکٹ نہیں دیئے جائیں گے کیونکہ پی ٹی آئی کو کے پی کے بلدیاتی انتخابات میں “نااہل” لوگوں کی وجہ سے بڑا دھچکا لگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں