48

42 فیصد کا خیال ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوگی، سروے

رائے شماری کے تقریباً 42 فیصد جواب دہندگان کا خیال ہے کہ تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو جائے گی اور وزیراعظم عمران خان کو ووٹنگ سے پہلے استعفیٰ دینا چاہیے۔

یہ نتائج ایپسوس کی جانب سے کیے گئے ایک سروے کے دوران سامنے آئے جس میں 1000 افراد کے نمونے شامل تھے۔

جبکہ 42 فیصد جواب دہندگان کا خیال تھا کہ اپوزیشن کامیاب ہو جائے گی، 26 فیصد نے کہا کہ حکومت عدم اعتماد کی تحریک کو کامیابی سے شکست دے گی اور 31 فیصد نے جواب دیا کہ وہ نہیں جانتے کہ اس کا نتیجہ کیا نکلے گا۔

ایک سوال کے جواب میں کہ اگر تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو جاتی ہے تو 27 فیصد کا خیال تھا کہ شہباز شریف کو عبوری وزیر اعظم ہونا چاہیے، 17 فیصد نے بلاول بھٹو اور 6 فیصد نے شاہد خاقان عباسی کو ترجیح دی۔

عام انتخابات کے بعد 18 فیصد نے نواز شریف کو وزیر اعظم بننے کو ترجیح دی، 16 فیصد نے عمران خان اور 14 فیصد نے شہباز شریف کو ترجیح دی۔

سروے کے مطابق، ایک بڑی تعداد — 48% — کا خیال ہے کہ موجودہ حکومت کے اتحادیوں کو اپوزیشن کا ساتھ دینا چاہیے، جب کہ جواب دہندگان میں سے صرف 27 فیصد نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اتحادیوں کو آئندہ تحریک عدم اعتماد میں عمران خان کی حمایت کرنی چاہیے۔

جواب دہندگان میں سے تقریباً 26 فیصد نے کہا کہ وہ “نہیں جانتے۔”

پولسٹر نے پوچھا کہ کیا وزیر اعظم کو تحریک عدم اعتماد سے پہلے استعفیٰ دینے کا انتخاب کرنا چاہیے، جس پر 44 فیصد نے کہا کہ وہ تحریک پیش کیے جانے سے پہلے عمران خان کے استعفیٰ کے حق میں ہیں۔ 33٪ نے سوچا کہ اسے تحریک کا مقابلہ کرنا چاہئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں