32

عدالت نے رانا ثناء اللہ کی ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری کی درخواست منظور کر لی

اے آر وائی نیوز نے منگل کو رپورٹ کیا کہ ایک مقامی عدالت نے اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ (ACE) پنجاب کی جانب سے وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کے خلاف وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کی درخواست منظور کر لی ہے۔

رانا ثناء اللہ کی درخواست منظور کرتے ہوئے مقامی عدالت نے تفتیشی افسر (آئی او) کو متعلقہ ریکارڈ سمیت 13 اکتوبر کو طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے وکلاء نے ثناء اللہ کے وارنٹ گرفتاری کے اجراء کو سینئر سول جج غلام اکبر کی عدالت میں چیلنج کر دیا۔

اس سے قبل منگل کو راولپنڈی کے سینئر سول جج کی عدالت نے وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کے وارنٹ گرفتاری کے خلاف درخواست اعتراض اٹھاتے ہوئے واپس کر دی۔

گزشتہ روز وزارت داخلہ کے ترجمان نے کہا تھا کہ رانا ثناء اللہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری ہونے کے بعد اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ (ACE) پنجاب کے خلاف عدالت سے رجوع کریں گے۔

وزارت داخلہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ اے سی ای پنجاب نے چار سال قبل درج ہونے والے کیس کے ریکارڈ میں فراڈ کیا۔

ACE پنجاب نے حقائق چھپانے کے بعد وزیر داخلہ کے خلاف وارنٹ گرفتاری حاصل کیے، جبکہ محکمہ اسلام آباد پولیس کو وارنٹ گرفتاری کے ساتھ تفصیلات فراہم نہیں کر رہا تھا۔

ثناء اللہ کے وارنٹ گرفتاری کا اجراء وفاقی حکومت کے خلاف ’سازش‘ تھا۔ کیس کے ریکارڈ میں چھیڑ چھاڑ اور فراڈ کے ذمہ داروں کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اس میں مزید کہا گیا کہ وزیر داخلہ عدالت اور اس کے احکامات کا احترام کرتے ہیں۔

ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری
8 اکتوبر کو راولپنڈی کے اسپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ نے وزیر داخلہ اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما رانا ثناء اللہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔

سپیشل جوڈیشل مجسٹریٹ کے سینئر سول جج غلام اکبر نے وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔ وفاقی وزیر کی گرفتاری کے لیے پولیس پارٹی تشکیل دے دی گئی۔

ایک بیان میں، اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ (ACE) پنجاب کے ترجمان نے کہا کہ اس نے انسداد بدعنوانی انکوائری میں پیش نہ ہونے پر مسلم لیگ (ن) کے رہنما کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے ہیں۔ ترجمان نے مزید کہا کہ وارنٹ وفاقی وزیر کے خلاف کیس نمبر 20/19 میں جاری کیے گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں