45

لاہور کے سی سی پی او غلام ڈوگر نے اپنی معطلی کے خلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیا

غلام محمود ڈوگر نے لاہور کیپیٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) کے عہدے سے معطلی کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کر دی۔

انہوں نے وفاقی حکومت، سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ اور پنجاب حکومت کو مدعا علیہ نامزد کیا۔

27 اکتوبر کو جاری ہونے والے نوٹیفکیشن میں وفاقی حکومت کو تین دن کے اندر چارج چھوڑنے کی ہدایت کی گئی تھی جب کہ انہیں 5 نومبر بروز اتوار کو معطل کیا گیا تھا، انہوں نے اپنی درخواست میں برقرار رکھا۔

درخواست میں کہا گیا کہ وفاقی حکومت نے دو وزراء کے خلاف دہشت گردی کے مقدمات درج کرنے کے لیے بے بنیاد الزامات لگا کر انہیں نشانہ بنایا۔

ڈوگر نے موقف اختیار کیا کہ وفاقی حکومت کے پاس سی سی پی او کی تقرری اور تبادلے کا کوئی اختیار نہیں لہذا معطلی کا حکم کالعدم قرار دیا جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ رولز آف بزنس کے تحت وزیراعلیٰ پنجاب کے پاس سی سی پی او کی تقرری یا تبادلے کا اختیار ہے۔

مزید یہ کہ عدالت کی جانب سے کیس کے مکمل ہونے تک معطلی اور تبادلے کے احکامات روکنے کی استدعا کی گئی۔

گورنر ہاؤس پر حملے کے ایک روز بعد وفاقی حکومت نے ہفتہ کو کیپٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) لاہور غلام محمود ڈوگر کو معطل کر دیا۔

لاہور پولیس کے سربراہ نے وفاقی حکومت کے احکامات کی تعمیل میں ناکامی پر تادیبی کارروائی کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں